Ek parda hai ghamon ka jise kehte hain khushi

  • By:

Ek parda hai ghamon ka jise kehte hain khushi

Hum tabasum main nihaan ashk-e-rawan dekhte hain

ایک پردہ ہے غموں کا جسے کہتے ہیں خوشی

ہم تبسّم میں نہاں اشکِ رواں دیکھتے ہیں


SOURCE :

Book :

Edition :

Publication :

Advertizement


Coments