Hadd se tawakuat hain ziyaada kiye huay

  • By:

Hadd se tawakuat hain ziyaada kiye huay

Baithay hain dil mie aik Iradaa kiye hauy

حد سے توقعات ہیں زیادہ کئے ہوئے

بیٹھے ہیں دل میں ایک ارادہ کیے ہوئے


SOURCE :

Book :

Edition :

Publication :

Advertizement


Coments